46

میر بشیر احمد رئیسانی نے تنظیم کے تمام سابقہ عہدے داران اور ممبران کا اجلاس طلب کر لیا

ڈیرہ مراد جمالی: بلوچستان کے معروف قبائلی و سماجی شخصیت پاکستان پرست رہنما اور بلوچستان عوامی اتحاد کے سابق مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل میر بشیر احمد رئیسانی نے سابقہ تنظیم “بلوچستان عوامی پارٹی” کو دوبارہ بحال کرنے کے لیے تنظیم کے تمام سابق عہدیداران اور ممبران کا 3 نومبر کی صبح 10 بجے جوائنٹ روڈ کوئٹہ کے پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ میں اہم اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں شرکت کے لیے انہوں نے تنظیم کے سبق چیئرمین نوابزادہ میر امین اللہ خان رئیسانی کو خصوصی طور پر شرکت کی دعوت دی ہے میر بشیر احمد رئیسانی نے نصیرآباد میں میڈیا کے نمائندوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ماضی میں نوابزادہ میر امین اللہ خان رئیسانی کی قیادت میں اپنی تنظیم کو ایک وفاقی سیاسی جماعت میں ضم کیا تھا مگر اس جماعت نے ناقص کارکردگی کی وجہ سے بلوچستان سمیت پاکستان بھر کے عوام کو مایوس کیا ہے جس کی وجہ سے ہم نے اپنی تنظیم ” بلوچستان عوامی اتحاد ” کی سابقہ حیثیت کو دوبارہ بحال کرنے کا حتمی فیصلہ کیا ہے جس کے لیے 3 نومبر کو منعقد ہونے والے اجلاس میں تمام ساتھیوں کے مشورے سے تنظیم کی دوبارہ کابینہ تشکیل دی جائے گی اور تنظیم کو منظم اور فعال کر کے بلوچستان کے عوام کی خدمت کی جدوجہد شروع کی جائے گی انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد بلوچستان کی ترقی عوام کی بلا امتیاز خدمت اور وفاق پاکستان کے نظریے پر عمل کر کے پاک فوج کے شانہ بشانہ اپنے وطن کی حفاظت اور استحکام کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کرنا ہے انہوں نے کہا کہ تنظیم کے سابق مرکزی وائس چیئرمین سمیت کچھی قلات خضدار، حب اور نصیرآباد سمیت بلوچستان بھر کے عہداروں اور ممبران کی اکثریت میرے ساتھ ہے اور ان شاءاللہ 3 نومبر کے اجلاس میں بلوچستان عوامی اتحاد کو بحال کر کے تنظیمی سرگرمیاں دوبارہ شروع کر دی جائیں گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں