74

ایف بی آر نے 7ارب کاٹ لیے,مقدمہ دائر کیا جائے:وزیراعلیٰ سندھ کی قانونی ٹیم کو ہدایت

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ ایف بی آر 2012 ،2015اور 2016 کے دوران صوبائی کنسولیڈیٹڈ فنڈ سے کاٹے گئے 7ارب54 کروڑ روپے واپس کرے ، انہوں نے اپنی قانونی ٹیم کو ہدایت کی کہ ایف بی آر کے خلاف مقدمہ تیار کرکے ہائیکورٹ میں دائر کیا جائے ۔ وزیراعلیٰ سندھ نے پیر کو نیو سندھ سیکریٹریٹ میں صوبائی کنسولیڈیٹڈ فنڈ سے ایف بی آر کی غیر قانونی کٹوتیوں کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کی۔اجلاس میں صوبائی وزیرایکسائز مکیش کمار چاؤلہ ، پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری فنانس نجم شاہ، سیکریٹری ایکسائز رحیم شیخ، ڈی جی ایکسائز شعیب صدیقی اور دیگر شریک تھے ۔ مکیش کمار نے وزیراعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ میرے محکمے نے ان لینڈ ریونیو ڈپارٹمنٹ اور انکم ٹیکس ٹریبونل میں غیر قانونی کٹوتیوں پر احتجاج کیا تھا، کراچی اور اسلام آباد میں ایف بی آر اوران لینڈ ریونیو افسران کے ساتھ متعدد اجلاس ہوئے ، لیکن 7ارب 54 کروڑ سے زائد رقم کی واپسی کے حوالے سے کوئی پیش رفت نہیں ہوسکی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ میں نے یہ معاملہ مشترکہ مفادات کونسل میں بھی اٹھایاتھا ، لیکن رقم کی واپسی کا فیصلہ نہیں ہوسکا، اب ہم اپنا مقدمہ عدالت میں لڑیں گے کیونکہ ایف بی آر اور وفاقی حکومت رقم واپس کرنے کا ارادہ نہیں رکھتے ۔ وزیر ایکسائز نے بتایا کہ اس حوالے سے 7اپیلیں دائر کی تھیں، جس میں سے ایک ڈپٹی ڈائریکٹر ایف بی آر کے پاس زیر التواء ہے ۔ جس پر وزیراعلیٰ سندھ کاکہناتھا کہ میں ڈپٹی ڈائریکٹر ایف بی آر کے سامنے پیش ہونے کے لیے تیار ہوں، فنڈ واپس لینے کیلئے ہر فورم پر جاؤنگا، بس میرا عزم ہے کہ میں یہ فنڈ واپس لوں گا ،کیونکہ یہ پیسے سندھ کے لوگوں کے ہیں اور یہ رقم سندھ کی ترقی پر خرچ ہوگی۔ وزیراعلیٰ سندھ کو بتایاگیا کہ ایک اور اپیل ان لینڈ ریونیو ٹریبونل میں زیر التواء ہے ، جس پر مراد علی شاہ نے کہا کہ بھرپور طریقے سے کیس کی پیروی کریں، مجھے آئندہ سماعت کا بتائیں، میں بھی وہاں پیش ہونگا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے محکمہ خزانہ کو ہدایت کی کہ کٹوتی کی رقم کے انٹرسٹ ریٹ پر بھی کام کیا جائے تاکہ ہم انٹرسٹ کا بھی دعویٰ کریں ۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ میں 7ارب 54 کروڑ سے زائد رقم کی واپسی کیلئے وزیراعظم کو بھی خط لکھوں گا۔ میں نے مشترکہ مفادات کونسل میں بھی معاملہ اٹھایا،لیکن کوئی فیصلہ نہیں ہوسکا، فنڈ واپس لینے کیلئے ہر فورم پر جاؤنگا،رقم سندھ کی ترقی پر خرچ ہوگی، مراد علی شاہ غیر قانونی کٹوتیوں پر احتجاج کرچکے ہیں، 7اپیلیں دائر کیں،متعدداجلاس بھی کئے لیکن رقم واپس نہیں ملی،مکیش کمار کی بریفنگ، نیوسندھ سیکریٹریٹ میں اجلاس

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں