70

بھارتی جیل میں مسلمان قیدی کو جبراً ہندو بنانے کی کوشش، پیٹھ پر لفظ ‘اوم’ داغ دیا

نئی دہلی:  بھارت کی تہاڑ جیل میں مسلمان قیدی کو جبراً ہندو بنانے کی کوشش، جیل سپرنٹنڈنٹ نے مسلمان قیدی کی پیٹھ پر لفظ ‘اوم’ داغ دیا۔ جیل سپرنٹنڈنٹ نے مسلمان قیدی کو زبردستی ہندو بنانے کی کوشش کی اور نوجوان کی پشت پر لفظ اوم داغ دیا، قیدی کو 2 روز تک کھانا بھی نہیں دیا گیا۔ شبیر نامی اس قیدی کے اہلخانہ نے مقامی عدالت سے رجوع کیا اور بتایا کہ ان کے بیٹے کی جان کو خطرہ ہے۔ عدالت کے حکم پر 34 سالہ شبیر کو عدالت پیش کیا گیا جہاں اس نے اپنی پشت پر داغا گیا لفظ اوم دکھایا۔ عدالت نے حکام کو مسلمان قیدی کی حفاظت یقینی بنانے اور واقعہ کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں