23

بھارتی خاتون نے چیف جسٹس پر جنسی ہراسگی کا الزام لگا دیا

نئی دہلی:  بھارت کی سب سے بڑی عدالت کی ایک سابق اہلکار نے ملک کے موجودہ چیف جسٹس رنجن گوگوئی پرجنسی ہراسگی کا الزام لگا دیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق 35 سالہ خاتون کے مطابق انہیں دوران ملازمت جنسی طور پر ہراساں کیا گیا تھا۔ انہوں نے اپنے بیان حلفی میں کہا کہ گزشتہ سال اکتوبر میں چیف جسٹس نے عہدے پر براجمان ہونے کے بعد دو مرتبہ جنسی طور پر ہراساں کیا۔خاتون نے کہا کہ ہراسگی کے بعد چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا کہ اس واقعہ کا ذکر کسی سے نہیں کرنا۔ جمع کرائے گئے بیان میں حلفی میں خاتون نے مزید کہا کہ اس واقعہ کے بعد میرا تین مرتبہ تبادلہ کیا گیا اور آخر کار مجھے ملازمت سے فارغ کر دیا گیا۔چیف جسٹس مسٹر گوگوئی نے سپریم کورٹ کے سیکرٹری جنرل کی طرف سے بیان جاری کرایا اور کہا کہ خاتون کے الزامات مکمل طور پر بے بنیاد، جھوٹ ہیں۔واضح رہے کہ بھارتی قانون کے مطابق مذکورہ خاتون کی شناخت ظاہر نہیں کی جا سکی۔ خاتون شادی شدہ ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں