66

الیکشن کمیشن کا فیصلہ جانبدار اور سازش قرار، عمران خان کا عدالت جانے کا اعلان

اسلام آباد: سابق وزیراعظم اور چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے توشہ خانہ ریفرنس میں نااہلی سے متعلق الیکشن کمیشن کے فیصلے کو ’جانبدار اور سازش کا حصہ‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم فیصلے کے خلاف عدالت جائیں گے جہاں ایک چیز بھی غیرقانونی نہیں نکلے گی۔بنی گالہ میں پارٹی رہنماؤں کے اجلاس کے بعد اپنے ویڈیو پیغام میں انہوں نے کہا کہ ہم نے توشہ خانہ سے جو چیزیں آدھی قیمت پر خریدی اس کا سارا ریکارڈ متعلقہ محکمے میں موجود ہے جبکہ توشہ خانہ کا قانون نواز شریف اور آصف علی زرداری نے توڑا تھا انہوں نے گاڑیاں نکالی تھیں۔’توشہ خانہ سے گاڑیاں نکالی اور قانون توڑا لیکن ان کے خلاف کوئی کیس سنا نہیں عمران خان نے کہا کہ جنہوں نے توشہ خانہ سے گاڑیاں نکالی اور قانون توڑا ان کے خلاف کوئی کیس سنا نہیں گیا اور 10 سال سے کیس زیر سماعت ہیں جبکہ میرے وکیل نے بتایا کہ توشہ خانے میں تمام ریکارڈ کی موجودگی کے باوجود میرے خلاف فیصلہ دیا۔چیئرمین پی ٹی آئی نے چیئرمین الیکشن کمیشن کے حوالے سے کہا کہ یہ وہ شخص ہے جو گزشتہ ڈھائی برس سے ہمارے خلاف فیصلے دے رہا ہے، اس کے فیصلے غیر جانبدار نہیں تھے، صاف و شفاف انتخابات کے لیے ای وی ایم کی کوشش کرتے رہے لیکن مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کے ساتھ ملکر وہ نہیں ہونے دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں