5

گریم اسمتھ نے بھی بابر اعظم کی ’’کلاس‘‘ کا اعتراف کرلیا

نئی دہلی: سابق جنوبی افریقی کپتان گریم اسمتھ نے پاکستانی ٹیم کی ورلڈ کپ میں انگلینڈ کیخلاف کامیابی کو سراہتے ہوئے نوجوان بیٹسمین بابر اعظم کی سپریم ’’کلاس ‘‘کا بھی اعتراف کرلیا جن کا کہنا تھا کہ وہاب ریاض کی پاکستانی ٹیم میں شمولیت بھی فائدہ مند ثابت ہوئی ہے ۔گریم اسمتھ نے حالیہ برسوں کے دوران پاکستانی ٹیم کی کارکردگی میں عدم تسلسل کی نشاندہی کرتے ہوئے واضح کیا کہ بابر اعظم کی شکل میں پاکستانی ٹیم کو مشکلات سے سنبھلنے اور توازن برقرار رکھنے کیلئے ایک بہترین سہارا مل گیا ہے جس کی بہت زیادہ ضرورت محسوس کی جا رہی تھی۔ان کا کہنا تھا کہ سپریم کلاس کا مالک بیٹسمین تسلسل کے ساتھ اپنی عمدہ کارکردگی سے یہ فرض نبھاتا رہا ہے اور انگلینڈ کیخلاف میچ میں اس کی کارکردگی نے ایک ایسی آگ بھڑکا دی جس کے سبب بالرز کو انگلش سرزمین پر اپنے قدم جمانے کا موقع مل گیا جو تواتر کے ساتھ کارکردگی دکھانے سے محروم تھے ۔گریم اسمتھ نے بائیں ہاتھ کے پیسر جنید خان کی جگہ وہاب ریاض کی پاکستانی ٹیم میں شمولیت کو مفید قرار دیتے ہوئے کہا کہ انگلینڈ کیخلاف میچ میں 348رنز کا دفاع اتنا آسان نہیں تھا لیکن وہاب ریاض کا متعارف کرایا جانا بہترین فیصلہ ثابت ہوا جو ٹرینٹ برج پر اگرچہ قدرے مہنگے ثابت ہوئے لیکن انہوں نے اہم لمحات میں قیمتی وکٹیں حاصل کر کے اپنے کاندھوں پر بڑی ذمہ داری اٹھائی۔گریم اسمتھ کا مزید کہنا تھا کہ محمد عامر کو دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ وہ ایک بار پھر اپنی سوئنگ کی صلاحیتوں کو اسی طرح ابھارنے میں کامیاب ہو رہے ہیں جس نے انہیں کیریئر کے آغاز میں تابناک مستقبل کا حامل بالر بنا دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں