15

خاتون کرپشن کرے تو قانون چھوڑنے کی اجازت نہیں دیتا:فردوس

لاہور، اسلام آباد : وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے اپوزیشن کو ایک بار پھر کہا ہے کہ عدالتی معاملات کو سیاست میں نہ گھسیٹا جائے ۔ قانون سے کھیلنا قانون کے محافظوں کیلئے ناقابل برداشت ہے ۔وکلا سے اپیل ہے کہ بینچ اور بار کے تعلقات مضبوط کرنے کیلئے حکومت کا ساتھ دیں۔مشرف کا مقدمہ پہلے ہی عدالت میں ہے ۔ اس دور میں کسی نے کرپشن کی ہے تو وہ جوابدہ ہوگا ۔نادان سیاستدانوں نے اپنی کرپشن پر بہنوں اور بیٹیوں کو ڈھال بنایا، قانون کی نظر میں مرد اور عورت کی تمیز نہیں ہوتی، خاتون کرپشن کرے تو قانون اسے چھوڑنے کی اجازت نہیں دیتا۔ حکومت نے کسی خاتون کا تقدس پامال نہیں کیا بلکہ عدالتی حکم پر فریال تالپور کو گھر میں قید کیاگیاہے ۔پنجاب اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو اور بلاول کی پریس کانفرنس پر ردعمل میں فردوس عاشق اعوان نے کہا لاہور ہائیکورٹ بار اور وکلا ایکشن کمیٹی خراج تحسین کی مستحق ہے جس نے قانون کی حکمرانی کیلئے مثال قائم کی ۔انہوں نے سابقہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا پنجاب اس سے قبل خاندانی سلطنت اورظل سبحانی کے زیراثر رہا،صوبہ 100ارب کا مقروض تھا،سابق حکومت نے صاف پانی کے نام پر خزانہ صاف کر دیا۔فردوس عاشق اعوان نے کہا اپوزیشن کو آئینی معاملات کو سیاسی اکھاڑے میں نہیں لے جاناچاہیے ۔وکلا عدالتی نظام کی بہتری کیلئے اپنی توانائیاں صرف کریں۔فردوس عاشق اعوان نے کہا عدالتی معاملات کو سیاست میں گھسیٹنے سے مقدمات طوالت کا شکار ہونگے اور عام آدمی کی مشکلات میں اضافہ ہوگا ۔عدالتیں قانون اور آئین کو جواب دہ ہیں شخصیات کو ن ہیں ۔ آصف زرداری کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنا سپیکر کا اختیار ہے ، وہ آئین و قانون کے مطابق فیصلہ کریں گے ۔محسن داوڑ اور علی وزیر دہشت گردی کے مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں۔ ملک کی تمام جماعتوں نے فیصلہ کیا تھا کہ جو ملکی مفاد کو نقصان پہنچائے گا اس کیخلاف کارروائی ہوگی ۔انہوں نے کہاڈالر کا کاروبار عارضی ہے ،جلد اس صورتحال سے نکل آئیں گے ۔ مشرف دور کے قرضوں اور کرپشن کا معاملہ بھی وزیراعظم کے اعلان کردہ کمیشن میں آنا چاہیے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں