8

ایک اور مماثلت ، آج بابر اعظم نے سنچری کی اورناٹ آﺅٹ رہا لیکن 92 میں کون سے کھلاڑی نے یہ کارنامہ سرانجام دیا تھا؟

برمنگھم : پاکستان کیلئے 2019 کے عالمی کپ میں بالکل وہی صورتحال بنتی جارہی ہے جو 1992 کے ورلڈ کپ میں تھی۔ نیوزی لینڈ کے خلاف میچ میں ایک بار پھر پاکستان نے 92 والی تاریخ دہراتے ہوئے انہیں شکست سے دوچار کیا ہے لیکن اس میچ میں ایک اور مماثلت بھی سامنے آئی ہے۔ ورلڈ کپ 2019 میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہونے والے میچ کا نمبر 33 تھا جبکہ 92 میں دونوں ٹیموں کے مابین ورلڈ کپ کا 34 واں میچ کھیلا گیا تھا۔ بدھ کو کھیلے گئے میچ میں پاکستان کی جانب سے صرف ایک کھلاڑی بابر اعظم نے سنچری سکور کی اور ناٹ آﺅٹ رہے جبکہ 1992 کے ورلڈ کپ میں بھی بالکل یہی صورتحال تھی ۔ 92 کے میچ میں نیوزی لینڈ نے 167 رنز کا ہدف دیا تھا جو پاکستان نے تین وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا تھا ، اس میچ میں پاکستان کی جانب سے رمیز راجہ نے 119 رنز بنائے اور ناٹ آﺅٹ رہے تھے۔ سابق ٹیسٹ کرکٹر اور کرکٹ کمنٹیٹر بازد خان کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر 92 اور 2019 کے ورلڈ کپ میں پائی جانے والی مماثلتوں کا بہت ذکر کیا جارہا ہے اور آج کے میچ میں بھی 92 کی تاریخ دہرائی گئی ہے، اگر تاریخ اپنے آپ کو دہرا رہی ہے اور آگے بھی یہی صورتحال رہی تو پاکستان کو روک پانا ناممکن ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں