77

شانگلہ کے پولیس کا کامیاب چھاپہ ڈراییور نجیب اللہ گرفتار

شانگلہ الپوری ( رضاشاہ سے ) شانگلہ کے پولیس کا کامیاب چھاپہ41 عدد سمگل کیے جانے والے سلیپران گاڈی نمبر A -L-2540جس کو ڈراییور نجیب اللہ ولد باور خان سکنہ لیلونیی چلا رہاکو مقامی پولیس نے گرفتار کرکے حوالات میں بند کردیا معمول کہ مطابق ایس ۔ایچ ۔او تھانہ الپوری ضلع شانگلہ فضل الہی گشت پر تھا جس کو اطلاع ملی کے مذکورہ گاڈی میں نامعلوم ملزمان غیر قانونی سلیپران کو لاد کر کے سمگل کیے جارہے ہیں موصوف ایس ۔ایچ۔او نے بھر وقت کاروالی کرتے ہوے ملزمان کو مال سمیت گرفتار کرکے تھانہ الپوری کے لاک اپ میں بند کردیا یاد رہے کہ موجودہ حکومت کے سخت اقدامات کے باوجود ضلع شانگلہ میں اب بھی غیر قانونی درختان کی کٹالی جاری ہے اور محکمہ فارسٹ کے اہلکاروں کی ملی بھگت سے اے روز غیر قانونی درختان کی کٹالی جاری ہے جس سے یہ صاف ظاہر ہوتا ہے محکمہ فارسٹ ضلع شانگلہ جنگل کی تحافض میں بوری طراح نام نظر اتے ہیں لہذاہ حکومت وقت کو چاھیے کہ وہ فارسٹ ایکٹ میں مزید قانون کو سخت کریں تاکہ ایندہ کیلے ٹیمبرمافیا والوں کو روکا جا سکیں اور شانگلہ کہ اس گھنیے جنگلات کو تباہی سے بچایا جا سکیں کیونکہ اگر ضلع شانگلہ کا یہ قدرتی حسن ہے تو وہ بھی اس جنگلات کی وجہ سے ہے اگر اس کو بھی اسطراح بے در دی سے ختم کیا گیا تو علاقے کی یہ قدرتی خبصورتی بہت جلد ختم ہو جایگی کیونکہ وہ جو کہتے ہیں کہ اس گھر کو اگ لگ گیی اس گھر کے چراغ سے تو جنگلات کے تباہی میں محکمہ فارسٹ اہلکار برابر کے شریک ہیں جو سب کے سامنے ہیں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بغیر سرکاری پرمٹ کے سلیپران پر محکمہ فارسٹ کا مہر لگاہ ہوا ہے جبکہ مال کمپا ر ٹمنٹ نمبر 40اور 41ایسٹ سے لایا گیا ہے اورملزمان کاغذات میں ویسٹ شو کرارہے ہیں جس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ محکمہ فارسٹ کے ا ہلکاروں کی ملی بھگت سمگلروں کے ساتھ ہے اور سمگلینگ میں برابر کے شریک ہیں اب دیکھنا یہ ہے کہ قانون کے محافظ کہاں تک قانون کی پاسداری کرتی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں